Press "Enter" to skip to content

Posts published in December 2018

سپریم کورٹ نے پاک ترک انٹرنیشنل کیگ ایجوکیشن فاؤنڈیشن کو دہشتگرد تنظیم قراردیدیا

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے پاک ترک انٹرنیشنل کیگ ایجوکیشن فاؤنڈیشن کو دہشت گرد تنظیم قرار دے دیا۔

سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے پاک ترک انٹرنیشنل کیگ ایجوکیشن فاؤنڈیشن کو دہشتگرد تنظیم قرار دینے سے متعلق تحریری فیصلہ جاری کردیا۔

15 صفحات پر مشتمل فیصلہ جسٹس اعجاز الاحسن نے تحریر کیا ہے جس کے مطابق آرگنائزیشن آف اسلامک کانفرنس اور ایشین پارلیمنٹ اسمبلی کے فیصلوں کی روشنی میں تنظیم کو دہشت گرد قرار دیا جاتا ہے۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ ترکی بھی مذکورہ تنظیم کو دہشت گرد قرار دے چکا ہے جب کہ پاکستان کے ترکی کے ساتھ برادرانہ تعلقات ہیں اور پاکستان بین الاقوامی سفارتی معاہدوں پر عمل درآمد کا پابند ہے۔

فیصلے میں تحریر کیا گیا ہے کہ وفاقی حکومت فتح اللہ گولن اور دیگر تنظیموں کو بھی دہشت گرد قرار دے اور پاک ترک انٹرنیشنل کیگ ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے تمام اثاثے ترکی معارف فاؤنڈیشن کو منتقل کیے جائیں۔

فیصلے کے مطابق فاؤنڈیشن کے زیرانتظام 28 اسکولوں کا بندوبست ترکی اور پاکستان کے درمیان معاہدوں کی روشنی میں کیاجائے اور وزارت داخلہ پاک ترک انٹرنیشنل کیگ ایجوکیشن فاؤنڈیشن کا اندراج انسداد دہشت گری کے تحت کرے۔

فیصلے میں پاک ترک انٹرنیشنل کیگ ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے تمام اکاؤنٹس منجمند کرنے کا بھی حکم دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ وزارت خزانہ تمام اکاؤنٹس ترک معارف فاؤنڈیشن کومنتقل کرنے کا انتظام کرے اور ایس ای سی پی پاک ترک انٹرنیشنل کیگ ایجوکیشن فاؤنڈیشن کی رجسٹریشن منسوخ کرے۔

اعلیٰ عدالت کے فیصلے میں کہا گیا ہے کہ پاک ترک انٹرنیشنل کیگ ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے نام سے جاری این او سی پہلے ہی منسوخ ہوچکے ہیں۔

فیصلے کے مطابق کسی دہشت گرد تنظیم کا پاکستان میں کام نہ کرنا پاکستان کے مفاد میں ہے، پاک ترک انٹرنیشنل کیگ ایجوکیشن فاؤنڈیشن 1990 میں قائم ہوئی اور تنظیم کے 28 اسکول ترک حکومت کے تعاون سے چلتے رہے۔

فیصلے میں لکھا ہے کہ کیگ ایجوکیشنل کارپوریشن ترکی میں ناکام فوجی حکومت کے قیام کی کوشش میں ملوث تھی اور فتح اللہ تنظیم، پاک ترک انٹرنیشنل کیگ ایجوکیشن فاؤنڈیشن کی پیرنٹ آرگنائزیشن ہے۔

تحریری فیصلے میں کہا گیا ہے کہ اسلامی سربراہی کانفرنس نے تاشقند میں 43 ویں اجلاس میں فتح اللہ تنظیم کو دہشت گرد قرار دیا۔

یاد رہے کہ سپریم کورٹ کے چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بینچ نے 13 دسمبر کو کیس کی سماعت کی تھی اور فیصلہ سنایا تھا۔

Please follow and like us:

علی رضا عابدی قتل کیس میں اہم پیش رفت

کراچی: وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ سابق رکن قومی اسمبلی عالی رضا عابدی کے قتل کیس میں کراچی ایئر پورٹ سے اہم گرفتاری ہوئی ہے۔

وزیراعلیٰ سید مراد علی شاہ  ایم کیو ایم کے مقتول رہنما علی رضا عابدی کے گھر پہنچے جہاں انہوں نے مرحوم علی رضا عابدی کے والد سید اخلاق عابدی سے ملاقات کر کے تعزیت کی۔

وزیراعلیٰ سندھ نے مرحوم کے والد کو اب تک کی تفتیش کے حوالے سے بھی آگاہ کیا۔

مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ کراچی ایئر پورٹ سے اہم گرفتاری ہوئی ہے، علی رضا عابدی تو واپس نہیں آ سکتے لیکن ظالم کو سزا ملنی چاہیے۔

انہوں نے علی رضا عابدی کے والد سے کہا کہ آپ اطمینان رکھیں، ہم قاتل کو گرفتار کریں گے اور میں اس شہر میں کسی کو بھی امن خراب کرنے نہیں دوں گا۔

ان کا کہنا ہے کہ پہلا واقعہ قائد آباد میں ہوا جس کے بعد یکے بعد دیگر واقعات ہوئے جو تشویش کا باعث ہیں۔

دوسری جانب ذرائع کا کہنا ہے کہ ایئرپورٹ سے گرفتار شخص کی نشاندہی پر گلستان جوہر میں کارروائی کی گئی جہاں واقعے میں ملوث 2 افراد کو حراست میں لیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق واقعے کی جیو فینسنگ مکمل کر لی گئی ہے، علی رضاعابدی اور پی ایس پی کارکنان کے قتل میں ایک گروہ ملوث ہوسکتا ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ دنوں کراچی کے علاقے ڈیفینس خیابان غازی میں قاتلانہ حملے میں جاں بحق ہوگئے تھے۔

Please follow and like us:

کرپشن میں ملوث سابق چینی انٹیلی جنس چیف کو عمر قید کی سزا

بیجنگ : عدالت نے چین کے سابق انٹیلی جنس چیف کو کرپشن رشوت ستانی اور کرپشن کیسز میں عمر قید کی سزا سنادی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق سابق انٹیلی جنس چیف ’ماجیان‘ سنہ 2015 سے زیر تفتیش تھے اور کمیونسٹ پارٹی نے ماجیان کو زیر تفتیش آنے کے ایک سال بعد نکال دیا گیا تھا۔

چین کے شمال مشرقی صوبے لیاؤنگ کی عدالت کا کہنا ہے کہ سابق انٹیلی جنس چیف کے اعتراف جرم کرنے اور کرپشن الزامات ثابت ہونے پر سزا سنائی گئی ہے، ماجیان عدالتی فیصلے کے خلاف اپیل نہیں کرسکتے۔

خیال رہے کہ چینی صدر انسداد کرپشن مہم کے تحت اب تک کئی اعلیٰ حکام کو کرپشن میں ملوث ہونے کے باعث سزائیں ہوچکی ہیں۔

سابق انٹیلی جنس چیف ’ماجیان‘ چین کے نائب وزیر برائے قومی سلامتی (اسٹیٹ سیکیورٹی) تھے۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ ماجیان کے کیس کا تعلق چین کے مفرور اور جلاوطن بزنس مین گؤ ونگوئی سے ہے، جس نے کمیونسٹ پارٹی کے اعلیٰ عہدیداران پر کرپشن الزامات کی پوری سیریز شائع کی تھی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ سابق انٹیلی جنس چیف نے اپنے عہدے کا استعمال گؤ ونگوئی کی مدد کےلیے کیا تھا۔

واضح رہے کہ چینی صدر ژی جن پنگ نے سنہ 2012 میں اقتدار سنبھالنے کے بعد انسداد کرپشن مہم کا آغاز کیا تھا جس کے تحت اب تک 10 لاکھ سے زائد افراد کو سزا دی جاچکی ہے۔

یاد رہے کہ دو ماہ قبل پراسرار طور پر لاپتہ ہونے والے انٹرپول کے سربراہ مینگ ہونگ کو چین نے تفتیش کے لیے حراست میں لینے کی تصدیق کی تھی جس کے بعد انہوں نے اپنا استعفیٰ انٹرپول کو ارسال کیا تھا۔

Please follow and like us:

سنچورین ٹیسٹ: ایک وکٹ جلد گرنے کے بعد جنوبی افریقی ٹیم سنبھل گئی

سنچورین: پاکستان اور جنوبی افریقا کے درمیان سنچورین ٹیسٹ کے تیسرے روز میزبان ٹیم کی بیٹنگ جاری ہے۔ 

پاکستان کی جانب سے دیے گئے 149 رنز کے ہدف کے تعاقب میں میزبان ٹیم کے اوپنرز میدان میں اترے تو دوسرے ہی اوور میں حسن علی کی گیند پر اوپننگ بلے باز ایڈن مرکرم ایل بی ڈبلیو آؤٹ ہوگئے۔

دوسری وکٹ پر ہاشم آملہ اور ڈین ایلگر نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کا مظاہرہ کیا اور 60 رنز بنالیے، دونوں بلے باز اب بھی کریز پر موجود ہیں اور میزبان ٹیم کا جیت کی جانب سفر گامزن ہے جب کہ پاکستان کو پہلا ٹیسٹ جیتنے کے لیے 9 وکٹیں درکار ہیں۔

اس سے قبل پاکستان نے اپنی پہلی اننگز میں 181 اور دوسری میں 190 رنز بنائے جب کہ جنوبی افریقا کی ٹیم پہلی اننگز میں 223 رنز بناسکی تھی۔

ٹیسٹ کا پہلا اور دوسرا دن بولرز کے نام رہا اور دونوں دن 15،15 وکٹیں گریں۔

Please follow and like us:

آصف زرداری ،بلاول، فریال تالپور سمیت 172 افراد کانام ’’ای سی ایل‘‘ میں شامل

سندھ میگا منی اسکینڈل کے تحت جعلی اکاؤنٹس کیس میں جے آئی ٹی کی رپورٹ میں شامل 172 افراد کے ناموں کی فہرست سامنے آ گئی۔ مذکورہ افراد کے نام وزارت داخلہ کی جانب سے ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کیے گئے ہیں۔

ای سی ایل میں شامل 172 افراد کے ناموں کی جاری کردہ  فہرست میں سابق صدرآصف زرداری کا نام فہرست میں 24ویں نمبر پر، ان کے صاحبزادے اور چیئرپرسن پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کا نام 27ویں اور ہمشیرہ فریال تالپور کا 36ویں نمبرپرموجود ہے۔

فہرست میں وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ 155ویں اور سابق وزیراعلیٰ قائم علی شاہ کا نام 129ویں نمبر پر شامل ہے۔

اس کے علاوہ سیکیورٹیز ایکسچینج کمیشن آف پاکستان کے قائم مقام چیئرمین طاہر محمود، بحریہ ٹاؤن کے مالک ملک ریاض، سابق وزیرداخلہ سندھ سہیل انورسیال، اومنی گروپ کے سربراہ انورمجید، ان کے بیٹے عبدالغنیٰ مجید، نمر مجید، اہلیہ نازلی مجید ، علی کمال مجید , صوبائی وزیر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن مکیش چاولہ، امتیاز شیخ کا نام بھی ای سی ایل میں شامل ہے۔

واضح رہے کہ وفاقی کابینہ نے جعلی اکاؤنٹس اور میگا منی لانڈرنگ کیس کی تحقیقات پر مبنی جے آئی ٹی رپورٹ میں شامل ملزمان کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالنے کا فیصلہ کیا تھا۔ گزشتہ روز وزیراعظم کی زیر صدارت کابینہ اجلاس میں سابق صدر آصف زرداری اور فریال تالپور سمیت 172 ملزمان کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کی منظوری دی گئی۔

Please follow and like us:

ہمیں کوئی ڈرا سکتا ہے اور نہ ہی جھکا سکتا ہے: آصف زرداری

گھوٹکی: پیپلزپارٹی کے صدر آصف علی زرداری نے کہا ہےکہ  کسی چیز سے گھبرانے کی کوئی بات نہیں کیونکہ پیپلزپارٹی کی قیادت کو کوئی ڈرا سکتا ہے اور نہ جھکا سکتا ہے۔

گھوٹکی میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے آصف علی زرداری نےکہا کہ اردو میں اس لیے بات کرتا ہوں کہ اسلام آباد میں بہرے، گونگے اور اندھے لوگ رہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اگر ہم نے 18 ویں ترمیم میں قدرتی وسائل میں صوبوں کو حق دیا ہے تو گھوٹکی کا کیا قصور اس کا حق ان کو نہیں ملتا، یہ چھوٹی بات نہیں، اگر یہ بات نکلے گی تو دور تک جائے گی۔

سابق صدر کا کہنا تھاکہ میری گیس فیلڈز یا کوئلے کی کانیں نہیں ہیں، ہم نے ان کو پبلک پرائیوٹ پارٹنر شپ میں غریبوں کی ملکیت بنادیا کیونکہ پیپلزپارٹی کی فلاسفی ہے کہ پہلا حق غریب اور مقامی لوگوں کا ہے۔

آصف زرداری نے مزید کہا کہ آپ کے کہنے سے پاکستان مضبوط نہیں ہوتا، ملک تب مضبوط ہوتا ہے جب عوام خوش ہوں، ہم نے کیا گناہ کیا، ہم نے جو کام کیے وہ آنے والی تاریخ لکھے گی۔

پیپلزپارٹی کے صدر کا کہنا تھاکہ آپ کو اگر اس بات کی تکلیف ہے کہ اتنی دھاندلی سندھ میں نہ کراسکے جتنی کہیں اور کرائی تو کوشش کرکے دیکھ لیں ہم اس کا بھی مقابلہ کریں گے، ہم نے الیکشن جیت کر بھی اپوزیشن میں بیٹھ کر دیکھا ہے، ہم لوگوں کی خدمت کرنے آتے ہیں، اپنی خدمت کرنے نہیں آتے۔

انہوں نے کہا کہ کسی چیز سے گھبرانے کی کوئی بات نہیں، جس قوم میں ایکا ہو اور اس نے اپنے حقوق سمجھ لیے ہوں تو اس قوم کو کوئی بھی جھکا نہیں سکتا، نہ آپ کی قیادت کو اور ورکروں کو کوئی ڈراسکتا ہے اور نہ جھکا سکتا ہے۔

Please follow and like us:

غربت کا خاتمہ، بے روزگار افراد کو ہنر کی فراہمی اوّلین ترجیح ہے، عمران خان

اسلام آباد : وزیر اعظم عمران خان نے ثانیہ نشتر سے ملاقات کے دوران کہا کہ غربت کا خاتمہ اور کمزور طبقے کو اٹھانا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان سے چیئرپرسن بی آئی ایس پی ثانیہ نشتر سے ملاقات کی، ملاقات میں وزیر اعظم نے کہا کہ جو خاندان غربت کی لکیر سے نیچے ہیں ان کی غذائی ضروریات کو پورا کریں گے۔

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ریاست احساس کا نام ہے جو معاشرے کے کمزور طبقوں کو اوپر اٹھاتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ غربت کے خاتمے کے لئے ایک مفصل پروگرام ترتیب دے رہے ہیں، جو کمزور طبقے کو غربت کے شکنجے سے نکالنے میں کردار ادا کرے۔

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پروگرام غربت سے متاثرہ افراد کی وقتی ضرورت تک محدود نہ ہو اور غربت کے چیلنج سے نمٹنے کے لئے ضروری ہے کو آرڈینیشن ہو۔

وزیر اعظم نے ثانیہ نشتر سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ غربت کے خاتمے، بے روزگار افراد کو ہنر کی فراہمی اولین ترجیح ہے، جو خاندان غربت کی لکیر سے نیچے ہیں ان کی غذائی ضروریات کو پورا کریں گے۔

ثانیہ نشتر نے عمران خان کو بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے متعلق بریفنگ دی جس پر وزیر اعظم عمران خان نے چیئرپرسن ثانیہ نشتر کو ضروریات پورا کرنے کےلیے پروگرام کو جلد حتمی شکل دینے کی ہدایت کردی۔

Please follow and like us:

اگر عمران خان کو مسلط کرنا تھا تو حکومت کرنا ہی سکھا دیتے: وزیراعلیٰ سندھ

گھوٹکی: وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے وزیراعظم عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہےکہ اگر عمران خان کو مسلط کرنا تھا تو حکومت کرنا ہی سکھادیتے۔

گھوٹکی میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے مراد علی شاہ نے وفاقی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

انہوں نے کہا کہ جب حکومت نہیں چلاسکتے تو یہی کرتے ہیں جو کررہے ہیں، یہ سو دن یا جتنے دن بھی رہیں، ان سے کچھ نہیں ہوگا، سندھ کے لوگوں سے دشمنی کی جارہی ہے، صرف پیپلزپارٹی ہی آکر لوگوں کی خدمت کرے گی۔

وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت نے دو تین ماہ میں اپنا کام ظاہر کردیا ہے، عمران خان کو مسلط کرنا تھا تو حکومت کرنا تو سکھا دیتے، عمران خان کو ان کی بیوی یاد دلاتی ہیں کہ وہ وزیراعظم ہیں، تو پیرنی سے کہو انہیں بتا بھی دے کہ حکومت کیسے کرتے ہیں۔

گھوٹکی: وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ سندھ کے لوگوں کے ساتھ دشمنی کی جارہی ہے، سندھ حکومت وفاق سے اپنا حق لے کر رہے گی۔

وفاقی حکومت پر الزام عائد کیا ہے کہ سندھ کے وسائل کو چھیننے کی کوشش کی جارہی ہے۔

جلسے سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اس قسم کےہتھکنڈوں سےگھبرانےوالےنہیں ہیں، ہماری قیادت کوتوالیکشن ہی نہیں لڑنےدیاگیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم سمجھتے تھے کہ نوازشریف کوسندھ پسند نہیں تھا،عمران خان کواس سےزیادہ سندھ پسند نہیں آرہا۔ جولوگ کہتےتھے کہ سندھ پرقبضہ کریں گےوہ سندھ سےبھاگ گئے۔

مراد علی شاہ کا مزید کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی قیادت متحد اور مضبوط ہے، سندھ حکومت اپناحق وفاقی حکومت سے لے کردکھائےگی۔

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت نے تھرمیں کوئلےسے توانائی پیدا کرنے کا پلانٹ بنایا تو وہاں کے لوگوں کو اس کا مالک بنایا۔ کول مائننگ سائٹ کے لیے جو دیہات ہٹائے گئے، انہیں پہلے 11 سو اسکوائرفٹ پرگھر بنا کر دیے گئے، وہاں کے عوام کو روزگار دیا گیا۔

سندھ حکومت ایس ایس جی سی کوگاؤں اور دیہاتوں میں گیس کی فراہمی کے لیے قرضہ دیتی ہے، ایس ایس جی سی کہتی ہے کہ قرضہ واپس نہیں کرسکتے،گرانٹ میں بدل دیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم لوگوں کی خاطر یہ بھی کرنےکوتیارہیں، لیکن سندھ کے معدنیات پرآئینی طورپرحق سندھ کاہے، وہ لےکرہی رہیں گے۔

یاد رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی رہنما خرم شیرزمان نےآج صبح وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا نام ای سی ایل میں شامل ہونے کے بعد ان سے استعفے کا مطالبہ کیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ پانچ سال پیپلز پارٹی کی حکومت ختم ہونے کا انتظار نہیں کرسکتے، تحریک انصا ف سندھ میں حکومت بنانے جارہی ہے۔

آج صبح وفاقی حکومت نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں نامزد 172 افراد کے نام ای سی ایل میں ڈال دیے تھے، ان افراد میں سابق صدر آصف علی زرداری ، فریال تالپور، بلاول بھٹو زرداری، مراد علی شاہ، قائم علی شاہ سمیت پیپلز پارٹی کے متعدد رہنماؤں کے نام شامل ہیں۔

Please follow and like us:

شہباز شریف کی زیرصدارت پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا پہلا اجلاس شروع

شہباز شریف کی زیرصدارت پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا پہلا اجلاس شروع

اسلام آباد: قومی احتساب بیورو (نیب) کے زیرحراست اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہباز شریف کی زیرصدارت پبلک اکاؤنٹس کمیٹی (پی اے سی) کا پہلا اجلاس پارلیمنٹ ہاؤس میں شروع ہوگیا۔

 اجلاس کے پہلے دن کمیٹی ونگ کے افسران اراکین کو بریفنگ دیں گے اور اجلاس کو بتایا جائے گا کہ ماضی میں کمیٹی نے کیا کام کیا اور کتنا کام باقی رہ گیا ہے۔

اجلاس میں نیب اور ایف آئی اے سمیت دیگر اداروں کے حکام بھی موجود ہوں گے۔

کمیٹی کا دوسرا اور تیسرا اجلاس بالترتیب پیر (31 دسمبر) اور منگل (یکم جنوری) کی صبح ہوگا۔

اس اجلاس کے دوران آڈیٹر جنرل آف پاکستان کمیٹی کو بریفنگ دیں گے۔

واضح رہے کہ شہباز شریف آشیانہ اقبال ہاؤسنگ اسکیم اسکینڈل کے سلسلے میں نیب لاہور کی حراست میں ہیں، نیب حکام پروڈکشن آرڈر جاری ہونے پر قومی اسمبلی اجلاس میں شرکت کے لیے انہیں لاہور سے اسلام آباد لاتے ہیں جبکہ وفاقی دارالحکومت کی انتظامیہ کی جانب سے منسٹر انکلیو میں واقع شہبازشریف کی رہائش گاہ کو سب جیل قرار دیا جاتا ہے۔

آج ہونے والے پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے اجلاس کے لیے بھی گذشتہ روز شہباز شریف کی جانب سے  اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے پروڈکشن آرڈر جاری کرنے کی درخواست کی گئی، جسے اسپیکر نے منظور کرتے ہوئے پروڈکشن آرڈر جاری کردیئے۔

واضح رہے کہ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کی چیئرمین شپ کے حوالے سے حکومت اور اپوزیشن میں ڈیڈ لاک تھا اور حکومت نے بطور چیئرمین شہباز شریف کی نامزدگی کو مسترد کردیا تھا، تاہم بعدازاں 13 دسمبر کو حکومت اور اپوزیشن میں شہباز شریف کو پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا چیئرمین بنانے پر اتفاق ہوگیا تھا۔گذشتہ روز وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے شہباز شریف کو پی اے سی چیئرمین بنانے کے فیصلے کو ‘آئین وقانون کے منافی’ قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ وہ اس معاملے پر سپریم کورٹ جانے کا سوچ رہے ہیں۔

Please follow and like us: