Press "Enter" to skip to content

نواز شریف کو جس بیرک منتقل کیا گیا وہاں عمران خان بھی رہ چکے ہیں

لاہور (25 دسمبر 2018ء) :سابق وزیراعظم نواز شریف کو اڈیالہ جیل سے کوٹ لکھپت جیل لاہور منتقل کر دیا گیا ہے۔اس موقع پر سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کو کوٹ لکھپت جیل لاہور منتقل کر دیا گیا ہے،نواز شریف کو سخت سیکورٹی حصار میں لاہور ائیرپورٹ سے لایا گیا۔سابق وزیراعظم کو خصوصی پرواز سے لاہور پہنچایا گیا۔
کوٹ لکھپت جیل کے اطراف میں سیکورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے۔جیل کے باہر کارکنوں کی بڑی تعداد میں موجود تھی،خواتین کارکن بھی کوٹ لکھپت جیل پہنچیں اور قائد کے حق میں نعرے بازی کی۔کوٹ لکھپت جیل بیرک نمبر 1 میں آصف علی زرداری نے قید کاٹی اور ماضی میں عمران خان بھی بیرک نمبر 1میں ایک دن گزار چکے ہیں اور اب یہیں پر نواز شریف کو بھی قید کاٹنی ہو گی۔

میڈیا رپورٹس میں مزید بتایا گیا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کو کوٹ لکھپت جیل منتقل کر دیا گیا۔ جیل ذرائع کے مطابق نواز شریف کوکوٹ لکھپت جیل کی سکیورٹی وارڈ میں رکھا گیا ہے۔شہبازشریف بھی نواز شریف کےساتھ اسی سیکیورٹی وارڈ میں رہیں گے۔ذوالفقارعلی بھٹو اور آصف زرداری بھی اسی جیل میں قید کاٹ چکے ہیں۔سکیورٹی وارڈ کے لان میں ذوالفقار علی بھٹواورآصف زرداری کےلگائے پودے بڑے ہو چکے ہیں۔
سابق وزیراعظم نواز شریف کو بیس بائے بیس کا کمرہ الاٹ کیا گیا ہے۔ کوٹ لکھپت جیل پہنچنے پر نواز شریف کی تصویر اُتاری گئی۔حاضری رجسٹرپر نواز شریف کے دستخط کروائے گئے اور میڈیکل بھی کیا گیا۔حاضری رجسٹرپرجیل حکام نےلکھا نوازشریف قیدی با مشقت نہیں ہیں۔ حاضری رجسٹرپرلکھا گیا نوازشریف علم حاصل کریں گے یا پڑھائیں گے۔ جیل میں نواز شریف کےکمرے سےملحقہ ایک کنال کالان بھی ہے۔

Please follow and like us:

Comments are closed.