Press "Enter" to skip to content

میڈیکل بورڈ کی نیب کو بلا تاخیر شہباز شریف کے طبی معائنے کی سفارش

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف کا طبی معائنہ کرنے والے میڈیکل بورڈ نے نیب کو بلا تاخیر مسلم لیگ ن کے صدر کے مزید طبی معائنے کی ہدایت کی ہے۔

سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف آشیانہ ہاؤسنگ اسکینڈل کے سلسلے میں اِن دنوں نیب لاہور کی تحویل میں ہیں۔

پارلیمنٹ لاجز اسلام آباد میں شہباز شریف کی رہائش گاہ کو سب جیل قرار دیا گیا ہے جہاں سے انہیں قومی اسمبلی اجلاس میں شرکت کے لیے خصوصی طور پر لایا جاتا ہے۔

شہباز شریف ماضی میں سرطان کے مرض کو شکست دے چکے ہیں لیکن 22 نومبر کو نیب کی جانب سے شہباز شریف کے طبی معائنے کے دوران ان کے خون کی تجزیاتی رپورٹ میں کینسر کی علامات دوبارہ ظاہر ہونے کا انکشاف ہوا تھا۔

25 نومبر کو پولی کلینک کے ڈاکٹروں نے ان کے خون کے نمونے حاصل کرنے کے علاوہ ان کا سی ٹی اسکین بھی کیا۔

چار رکنی میڈیکل بورڈ نے اپنی رپورٹ میں لکھا کہ مریض کا مزید طبی معائنہ کرانے کی ضرورت ہے جس کے لیے پانچ تجاویز پر فوری عمل کیا جائے، طبی معائنے کی روشنی میں علاج کی حکمت عملی بنانا ہو گی۔

میڈیکل بورڈ کی رپورٹ کے مطابق مزید تشخیص کے لیے خون اور پیشاب سمیت دیگر ضروری ٹیسٹ کرائے جائیں اور گردن اور ریڑھ کی ہڈی کے مہروں کے جائزے کے لیے ایم آر آئی کرایا جائے۔

رپورٹ میں لکھا گیا ہے کہ نیورو اینڈو کرائن ٹیومر کی تشخیص کے لیے اسکین کرایا جائے اور آنت میں مرض دوبارہ ہونے کی تشخیص کے لیے اینڈو اسکوپی کرائی جائے۔

اس کے علاوہ سرطان کی علامت بننے والے کرومو گرینن اے اور بی کا تجزیہ دہرانے کی تجویز بھی دی گئی ہے۔

ذرائع کا بتانا ہے کہ نیب نے میڈیکل بورڈ کی رپورٹ قائد حزب اختلاف شہباز شریف کو بھی بھجوا دی ہے۔

ذرائع کے مطابق شہباز شریف نے 17 دسمبر کو میڈیکل بورڈ کی رپورٹ کے لیے ڈی جی نیب کو خط لکھا تھا جس میں رپورٹ نہ ملنے سے علاج میں رکاوٹ آنے کی شکایات کی گئی تھی۔

Please follow and like us:

Be First to Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *