Press "Enter" to skip to content

صدرِ مملکت عارف علوی نے رشوت دینے کا اعتراف کر لیا

اسلام آباد(08 دسمبر2018ء) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے 70کی دہائی میں رشوت دینے کا اعتراف کر لیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق صدر عارف علوی نے قومی الیکشن ڈے کے حوالے سے منعقدہ تقریب میں شرکت کی جہاں انہوں نے ذاتی زندگی سے متعلق بھی گفتگو کی اور اس دوران ہی انہوں نے ایک اہم انکشاف بھی کر دیا۔صدر مملکت کا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ جب میں ڈینٹسٹ بنا تو میں نے فون لگوایا۔
اس زمانے میں یعنی کے 1970ء میں ٹیلی فون لگوانے کے لیے میں نے 50 ہزار روپے رشوت دی تھی۔سوشل میڈیا پر خبر آئی تو صارفین نے صدر مملکت کو آڑے ہاتھوں لے لیا اور کہا کہ جس زمانے میں عارف علوی نے پچاس ہزار رشوت دی تھی تب سونا ایک ہزار روپے فی تولہ تھا تو اس کا مطلب ہے کہ انہوں نے ٹیلی فون لگوانے کے لیے پچاس تولے سونا رشوت دی۔

خیال رہے حکومتی جماعت تحریک انصاف کے امیدوار عارف علوی اسلامی جمہوریہ پاکستان کے 13ویں صدرمملکت منتخب ہوئے۔

انہوں نے صدراتی الیکشن میں بھاری ووٹوں سے کامیابی حاصل کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اللہ پاک کاشکر ادا کرتا ہوں کہ تحریک انصاف کا نامزد امیدوار صدر مملکت کیلئے کامیاب ہوا ہے۔ عمران خان کا شکریہ کہ انہوں نے مجھے اس عہدے کیلئے ذمہ دار سمجھا۔انہوں نے کہا کہ اللہ سے دعا ہے کہ مجھے اس عہدے پرپاکستان کی بہتری کیلئے کام کا موقع ملا۔
میں ووٹرز اور تمام اتحادی سیاسی جماعتوں کا مشکور ہوں اور سپورٹرز کا بھی مشکور ہوں جنہوں نے پی ٹی آئی کوووٹ دیا۔ غریب کے تن پرکپڑا اور اس کے سر پرچھت ہواور پیٹ میں روٹی ہو۔اللہ سے دعا ہے کہ 5سالوں میں غریب کی قسمت بدل جائے۔ ہرمزدور کوروٹی ، غریبوں اور بیماروں کا علاج ہوسکے، جو بچے سکولوں سے باہر ہیں ان کوتعلیم مل سکے۔انہوں نے کہا کہ میں آج منتخب ہونے کے بعد صر تحریک انصاف کا نہیں بلکہ پورے پاکستان اور تمام سیاسی جماعتوں کا صدر ہوں۔پاکستان کی بہتری کیلئے ہرممکن اقدامات اٹھاؤں گا۔اب میں اور بھی بہتر طریقے سے کام کروں گا۔انہوں نے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ سکیورٹی جائز ہوگی پروٹوکول کم ہونا چاہیے۔

Please follow and like us:

Be First to Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *