Press "Enter" to skip to content

بلوچستان میں پانی کا مسئلہ سنگین ہو چکا، قابو پانے کیلئے جامع منصوبہ بندی کی ضرورت ہے

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بلوچستان میں پانی کا مسئلہ سنگین ہو چکا ہے، اس مسئلے پر قابو پانے کے لیے جامع منصوبہ بندی کی ضرورت ہے۔

عمران خان سے کیڈٹ کالج مستونگ کے طلبا نے وزیرِ اعظم آفس میں ملاقات کی، ملاقات میں وفاقی وزیر برائے دفاعی پیداوار زبیدہ جلال بھی موجود تھیں۔

ملاقات میں طلبا کی جانب سے مختلف موضوعات پر وزیرِ اعظم سے بات چیت کی گئی۔

اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ انسان کی پہچان اس کے ارادوں اور اس کی سوچ سے ہوتی ہے، جو انسان جتنے بڑے خواب دیکھتا ہے اور جتنے بڑے چیلنجز قبول کرتا ہے وہ اتنا ہی بڑا انسان ہوتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہر چھوٹی کامیابی انسان کو بڑی کامیابیوں کے لئے تیار کرتی ہے، انسان جب تک محنت جاری رکھتا ہے وہ بڑا شخص بنتا جاتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ انسان ہارتا اس وقت ہے جب وہ ہار مان لیتا ہے، اچھا اور برا وقت زندگی کا حصہ ہوتے ہیں، برا وقت انسان کو سبق سکھاتا ہے۔

بلوچستان کے مسئلے پر بات کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ بلوچستان میں پانی کا مسئلہ بہت سنگین ہے، بڑھتی ہوئی آبادی اور زیرِ زمین پانی کی سطح کے مزید نیچے جانے سے یہ مسئلہ اور بھی سنگین ہو چکا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ اس مسئلے پر پر قابو پانے کے لیے جامع منصوبہ بندی کی ضرورت ہے۔

تعلیمی نظام کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ ملک میں تین طرح کے نظام تعلیم نے مسائل کو جنم دیا، مختلف طبقوں کے لیے مختلف نظام تعلیم کی کسی معاشرے میں گنجائش نہیں ہوتی۔

انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہے ملک بھر میں یکساں اور معیاری نصابِ تعلیم رائج کیا جائے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ مختلف وجوہات کی بنیاد پر بلوچستان ملک کے باقی حصوں سے پیچھے رہ گیا، ہماری پوری کوشش ہو گی کہ بلوچستان کی تعمیر و ترقی اور خصوصاً طالب علموں کو تعلیم کے مواقع کی فراہمی کے لیے اقدامات کیے جائیں اور ان کو وظائف دے کر تعلیم کے میدان میں آگے بڑھنے میں مدد دی جائے۔

انہوں نے کہا کہ نئے بلدیاتی نظام میں ترقیاتی فنڈز نچلی سطح پر منتقل کیے جائیں گے، ولیج کی سطح پر ترقیاتی فنڈز کی فراہمی سے بلوچستان کے علاقوں کی پسماندگی دور کرنے میں مدد ملے گی۔

کھیلوں کے حوالے سے بات کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ملک بھر میں اسپورٹس کا نیا نظام لائیں گے تاکہ نوجوانوں کو کھیل کے میدان میں اپنی صلاحیتیوں کے جوہر دکھانے کے مواقع میسر آئیں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ہم نے پاکستان کو ریاستِ مدینہ کے اصولوں پر چلانے کا عہد کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ طالب علموں کے لیے ضروری ہے کہ وہ دنیا کے سب سے عظیم لیڈر ہمارے پیغمبر آنحضرت ﷺ کی حیاتِ مبارکہ کے بارے میں تعلیم حاصل کریں تاکہ ان کی سیرتِ طیبہ سے رہنمائی حاصل کی جا سکے۔

ان کا کہنا تھا کہ آنحضرتﷺ کی سیرت طیبہ پر ریسرچ کے فروغ کے لیے ملک کی تین بڑی جامعات میں سیرت چیئر قائم کی جا رہی ہے۔

Please follow and like us:

Be First to Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *